Breaking News
Home / آپ کے مسائل اور اُن کا شرعی حل / منہ اور ناک ڈھانک کر نماز پڑھنا۔سردیوں کی مناسبت سے اہم فتوٰی

منہ اور ناک ڈھانک کر نماز پڑھنا۔سردیوں کی مناسبت سے اہم فتوٰی

موسمِ سرما کی مناسبت سے پیش آمدہ مسائل۔💭 1⃣ منہ اور ناک ڈھانک کر نماز پڑھنا ✍www.jfdmuftitanvirdhurnal.com باسمہ سبحانہ وتعالی
موسمِ سرما میں کچھ لوگ رومال یا چادر وغیرہ سے اپنے منہ اور ناک کو ڈھانک کر نماز پڑھتے ہیں۔نماز کے دوران منہ اور ناک ڈھانکنا مکروہِ تحریمی ہے۔
البتہ مریض آدمی کو نماز میں منہ ڈھانکنے کی ضرورت پیش آئے تو اس کے لیے منہ ڈھانکنے کی گنجائش ہے۔
[فُرُوعٌ]يُكْرَهُ اشْتِمَالُ الصَّمَّاءِ وَالِاعْتِجَارُ وَالتَّلَثُّمُ وَالتَّنَخُّمُ وَكُلُّ عَمَلٍ قَلِيلٍ بِلَا عُذْرٍ۔
و فی الشامية:
(قَوْلُهُ :وَالتَّلَثُّمُ) وَهُوَ تَغْطِيَةُ الْأَنْفِ وَالْفَمِ فِي الصَّلَاةِ لِأَنَّهُ يُشْبِهُ فِعْلَ الْمَجُوسِ حَالَ عِبَادَتِهِمْ النِّيرَانَ زَيْلَعِيٌّ. وَنَقَلَ ط عَنْ أَبِي السُّعُودِ أَنَّهَا تَحْرِيمِيَّةٌ .(الدر المختار مع رد المحتار)فقط واللہ سبحانہ وتعالی اعلم بالصواب
0Shares

About Mufti Tanvir Ahmed

Check Also

تین اہم فتاوی جات۔۔1 نابالغ نرینہ بچوں کو چاندی کے علاوہ کسی اور دھات کی انگوٹھی پہنانا۔2۔مرحوم کی نمازوں کا فدیہ ؟تیسرا 3بجلی چوری کے لیے کنڈوں کا استعمال؟مفتی تنویراحمد

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے