Breaking News
Home / آپ کے مسائل اور اُن کا شرعی حل / آج کی ااہم بات / سورج گرہن اور حاملہ عورت پر اثرات کا وہم ؟
از✍🏻مفتی تنویراحمد

سورج گرہن اور حاملہ عورت پر اثرات کا وہم ؟
از✍🏻مفتی تنویراحمد

سورج گرہن اور حاملہ عورت ؟از✍🏻مفتی تنویراحمدکل 26دسمبر ہے جس میں صبح ساڑھے سات سے دس بجے تک سورج گرہن ہوگا۔حاملہ عورت یا اس کے بچے پر سورج گرہن کا کوئی اثر نہیں پڑتا۔اس بارے میں جو کچھ کہا جاتا ہے یا یوٹیوب کی مختلف ویڈیوز میں ڈرایا جاتا ہے سب وہم اور من گھڑت ہے ۔۔اس موقع پرکمزور ایمان والے سادہ لوح مسلمان اپنی خواتین کو کمرے میں بند رہنے کا اور قینچی ۔چھری یا لوہے والی کوئی چیز ہاتھ میں رکھنے سے یا اس وقت سبزی وغیرہ کاٹنے ۔سلائی کڑھائی کے کام کرنے سے منع کرتے ہیں بے جا پابندیاں لگادیتے ہیں اور کہتے ہیں اس سے بچے کے جسم پر غلط اثر پڑسکتا ہے یہ سب جاھلانہ ڈھکوسلے ۔وہم اور شریعت سے دوری کا سبب ہے۔یہ سب خیالات مسلمانوں کے اندر کسی قدر ہندو معاشرے کے قدیم رہن سہن اور رسوم رواج سے متاثر ہونے اور جہالت سے پیدا ہوئے جن کا حقیقت اور دین سے دور کا بھی واسطہ نہیں یہ بالکل اسی طرح جیسے لوگ کالی بلی کے راستہ کاٹ لینے کی وجہ سے سفر چھوڑ دیتے ہیں کہ نقصان ہوگا حالانکہ یہ ایک اتفاقی واقعہ ہوتا ہے۔۔۔جس طر ح شریعت میں ایسے خیا لات کو من گھڑت کہا گیا ایسے ہی قدیم وجدید طب وحکمت ۔ہومیو و ایلو پیتھک والوں میں سے کوئی بھی حاملہ عورت کو ایسی احتیاطی تدابیر کا مشورہ نہیں دیتا یہ بس جاہل عاملوں کے ڈھکوسلے ہیں۔۔اور عجیب بات یہ کہ صرف پاک وہند کی خواتین اس سے متاثر ہوتی ہیں باقی دنیا میں تو کہیں ایسی بات اور پابندیوں کا ذکر ہی نہیں بلکہ باقی دنیا تو اس قدرت کی نشانی اورمنظر سے محظوظ ہورہی ہوتی ہے۔۔۔ اس لیے ایسے موقع پر ہمیں اس قدرت کی نشانی کو دیکھ کر اللہ اکبر ۔استغفار ۔صدقہ دینے اور نماز کسوف ادا کرنے اور خوب دعاوں کا اہتمام کرنا چاہیے۔جو سنت موکدہ ہے۔۔۔خود سرکار دوعالم صلی اللہ علیہ وسلم نے ایسے خیالات کا جڑ سے خاتمہ فرمادیا ان الفاظ کے ساتھ کہ سورج اور چاند گرہن اللہ پاک کی نشانیوں میں سے ہے اس کا کسی انسانی زندگی اور موت کے ساتھ کوئی تعلق نہیں۔۔۔۔اس موقع پر نماز ۔دعا اور استغفار کا اہتمام کرو۔۔۔۔۔www.jfdmuftitanvirdhurnal.com
0Shares

About Mufti Tanvir Ahmed

Check Also

خود کشی کا بھیانک انجام

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے