Breaking News
Home / Uncategorized / خود کشی کا بھیانک انجام

خود کشی کا بھیانک انجام

0Shares

About Mufti Tanvir Ahmed

Check Also

سورج گرہن کے متعلق نہایت اہم اور دلچسپ معلومات
26 دسمبر بروز جمعرات کو سورج گرہن ہوگا جو پاکستان بھر میں دیکھا جا سکے گا سورج گرہن پاکستان کے زیاده تر علاقوں میں جزوی طور پر دیکھا جائے گا ملک کے کسی بھی علاقے میں 100فیصد مکمل سورج گرہن کا کوئی امکان نہیں سب سے زیاده سورج گرہن پاکستان کے جنوبی علاقوں سے دیکھا جاسکے گا پاکستان کی ساحلی پٹی پر بعض مقامات پر چاند 82 فیصد سے زیاده سورج کو چھپا لے گا ملک کے دیگر تمام علاقوں میں بھی جزوی سورج گرہن کا نظاره کیا سکے گا سورج گرہن صبح کے وقت لگے گا سورج گرہن کا آغاز صبح 7 بج کر 34 منٹ پر ہوگا 8 بج کر 46 منٹ پر سورج گرہن عروج پر ہوگا جبکہ سورج گرہن کا اختتام 10 بج کر 10 منٹ پر ہوگا سورج گرہن کا دورانیہ 2 گھنٹے اور 37 منٹ ہوگا یہ اوقات صرف کراچی کے حساب سے ہیں
پاکستان کے کس شہر میں کتنے فیصد سورج سیاه دکھائی دے گا ؟ اور اس کا وقت کونسا ہوگا ؟ اس متعلق معلومات تحریر کے آخر میں پڑھ سکتے ہیں۔
چاند ہماری زمین کے گرد چکر لگا رہا ہے ہماری زمین سورج کے گرد۔ ﺳﻮﺭﺝ ﮔﺮﮨﻦ ﺍﺱ ﻭﻗﺖ ﻟﮕﺘﺎ ﮨﮯ ﺟﺐ ﭼﺎﻧﺪ ﺩﻭﺭﺍﻥِ ﮔﺮﺩﺵ ﺯﻣﯿﻦ ﺍﻭﺭ ﺳﻮﺭﺝ ﮐﮯ ﺩﺭﻣﯿﺎﻥ ﺁ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ، ﺟﺲ ﮐﯽ ﻭﺟﮧ ﺳﮯ ﺳﻮﺭﺝ ﮐﺎ ﻣﮑﻤﻞ ﯾﺎ ﮐﭽﮫ ﺣﺼﮧ ﺩﮐﮭﺎﺋﯽ ﺩﯾﻨﺎ ﺑﻨﺪ ﮨﻮ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ۔ ﺍﺱ ﺻﻮﺭﺕ ﻣﯿﮟ ﭼﺎﻧﺪ ﮐﺎ ﺳﺎﯾﮧ ﺯﻣﯿﻦ کے جس جس حصے سے گزرتا ﮨﮯ وہاں وہاں سورج گرہن دکھائی دیتا ہے ﭼﻮﻧﮑﮧ ﺯﻣﯿﻦ ﺳﮯ ﺳﻮﺭﺝ ﮐﺎ ﻓﺎﺻﻠﮧ ﺯﻣﯿﻦ ﮐﮯ ﭼﺎﻧﺪ ﺳﮯ ﻓﺎﺻﻠﮯ ﺳﮯ 400 ﮔﻨﺎ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺳﻮﺭﺝ ﮐﺎ ﻣﺤﯿﻂ ﺑﮭﯽ ﭼﺎﻧﺪ ﮐﮯ ﻣﺤﯿﻂ ﺳﮯ 400 ﮔﻨﺎ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﮨﮯ، ﺍﺱ ﻟﯿﮯ ﮔﺮﮨﻦ ﮐﮯ ﻣﻮﻗﻊ ﭘﺮ ﭼﺎﻧﺪ ﺳﻮﺭﺝ ﮐﻮ ﻣﮑﻤﻞ ﯾﺎ ﮐﺎﻓﯽ ﺣﺪ ﺗﮏ ﺯﻣﯿﻦ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﯽ ﻧﻈﺮﻭﮞ ﺳﮯ ﭼﮭﭙﺎ ﻟﯿﺘﺎ ﮨﮯ۔ اسی لئے یوں لگتا ہے گویا سورج کا مکمل یا کچھ حصہ سیاه ہوچکا ہے
ﻣﮑﻤﻞ ﺳﻮﺭﺝ ﮔﺮﮨﻦ ﺍﺱ ﻭﻗﺖ ﻟﮕﺘﺎ ﮨﮯ ﺟﺐ ﭼﺎﻧﺪ ﮐﺎ ﻓﺎﺻﻠﮧ ﺯﻣﯿﻦ ﺳﮯ ﺍﺗﻨﺎ ﮐﻢ ﮨﻮ ﮐﮧ ﺟﺐ ﻭﮦ ﺳﻮﺭﺝ ﮐﮯ ﺳﺎﻣﻨﮯ ﺁﺋﮯ ﺗﻮ ﺳﻮﺭﺝ ﻣﮑﻤﻞ ﻃﻮﺭ ﭘﺮ ﭼﺎﻧﺪ ﮐﮯ ﭘﯿﭽﮭﮯ ﭼﮭﭗ ﺟﺎﺋﮯ۔ اگلے چند ہزار سال میں سب سے لمبے دورانیئے والا مکمل سورج گرہن ﺟﻮﻻﺋﯽ 2186 ﻋﯿﺴﻮﯼ ﮐﻮ ﻟﮕﮯ ﮔﺎ ﺟس دوران ﺳﺎﺕ ﻣﻨﭧ ﺍﻭﺭ ﺍﻧﺘﯿﺲ ﺳﯿﮑﻨﮉ تک اندھیرا چھا جائے گا
سورج گرہن کے دوران کبھی بھی سورج کو ننگی آنکھ سے نہیں دیکھنا چاہئے اگر آپ یہ مناظر دیکھنے کی خواہش رکھتے ہیں تو آپ سورج گرہن دیکھنے کے لئے بنائے جانے والے مخصوص چشمے کی مدد سے دیکھ سکتے ہیں
سورج ﮔﺮﮨﻦ دین اسلام ﻣﯿﮟ ﺧﺪﺍ ﮐﯽ ﻧﺸﺎﻧﯿﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺳﮯ ﺍﯾﮏ ﺳﻤﺠﮭﺎ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ۔۔
رسول اکرم ﷺ کے زمانے میں جب سب سے پہلا سورج گرہن ہوا اتفاق سے اسی دن آپ ﷺ کے بیٹے ابراہیم کی وفات ہوئی تھی۔ لہذا لوگ کہنے لگے کہ سورج گرہن آپﷺ کے بیٹے کی وفات کی وجہ سے ہوا ہے۔ حضورﷺ نے اس ضعیف الاعتقادی کو ان الفاظ سے رد فرمایا:
سورج اور چاند کسی کے مرنے سے گرہن نہیں ہوتے۔ یہ تو قدرت الٰہی کی دو نشانیاں ہیں جب انہیں گرہن ہوتے دیکھو تو نماز کے لیے اٹھ کھڑے ہو۔
(صحيح بخاری: 1041)
ایک حدیث کے الفاظ یہ ہیں :
صحیح بخاری ہی کی ایک اور حدیث میں مرقوم ہےکہ آپﷺ نے فرمایا:
’’چاند اور سورج کا گرہن آثار قدرت ہیں۔ کسی کے مرنے، جینے (یا کسی اوروجہ)سے نمودار نہیں ہوتے۔ بلکہ اللہ اپنے بندوں کو عبرت دلانے کے لئے ظاہر فرماتا ہے۔ اگر تم ایسے آثار دیکھو تو جلد از جلد دعا، استغفار اور یاد الٰہی کی طرف رجوع کرو۔‘‘
(صحیح بخاری : 1059)
لہذا جب ایسا معاملہ پیش آئے تو اہل ایمان کو چاہئے کہ وہ اس نظارہ سے محظوظ ہونے اور توہمات کا شکار ہونے بجائے دربار خداوندی میں حاضری دیں اور گڑگڑا کر اپنے گناہوں کی معافی طلب کریں۔ کیونکہ سورج اور چاند گرہن اللہ کی نشانیوں میں سے ہیں ان كى ذریعے اللہ تعالیٰ اپنی مخلوق کو ڈراتاہے اور ان کے ذہنوں میں قیامت کا منظر تازہ کرتا ہے کہ اس دن سورج لپیٹ دیا جائے گا اور ستارے توڑ دئیے جائیں گے، سورج اور چاند جمع کردئیے جائیں گے، وہ دونوں بے نور ہو جائیں گے۔ سرورکائنات ﷺ کا شمس و قمر کے گہنائے جانے پر عالم یہ تھا کہ آپ ﷺ گھبرا اٹھتے اور نماز پڑھتے۔
نماز کسوف کا طریقہ
جب سورج گرہن ہو تو چاہئے کہ امام کے پیچھے دو رکعتیں پڑھے جن میں بہت لمبی قرات ہو اور رکوع سجدے بھی خوب دیر تک ہوں، دو رکعتیں پڑھ کر قبلہ رُو بیٹھے رہیں اور سورج صاف ہونے تک اللہ تعالیٰ سے دعا کرتے رہیں۔
سورج گرہن کی نماز کی نیت : نیت کرتا ہوں دو رکعت نماز نفل کسوفِ شمس کی، واسطے اللہ تعالیٰ کے، پیچھے اس امام کے، رُخ میرا قبلہ کی طرف، اَﷲُ اَکْبَر۔
26 دسمبر کو ہونے والے سورج کے دوران پاکستان کے کونسء شہر میں کس وقت اور کتنے فیصد سورج کو گرہن لگے گا معلومات پڑھیں
کراچی 77 فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 34 منٹ پر
عروج 8 بج کر 46 منٹ پر
اختتام دس بج کر دس منٹ پر
اسلام آباد
49 فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 26 دسمبر صبح 7 بج کر 50 منٹ پر
عروج 8 بج کر 58 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 15 منٹ پر
لاہور
52 % فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز صبح 7 بج کر 47 منٹ پر
عروج 8 بج کر 58 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 19 منٹ پر
کوئٹہ
64% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 39 منٹ پر
عروج 8 بج کر 48 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 8 منٹ پر
پشاور
50% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز صبح 7 بج کر 48 منٹ پر
عروج 8 بج کر 56 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 13 منٹ پر
حیدر آباد
74% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 35 منٹ پر
عروج 8 بج کر 47 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 12 منٹ پر
ملتان
59% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز صبح 7 بج کر 42 منٹ پر
عروج 8 بج کر 53 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 15 منٹ پر
گوادر
سب سے زیاده 82% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 34 منٹ پر
عروج 8 بج کر 42 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 3 منٹ پر
ڈی آئی خان
56 فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 44 منٹ پر
عروج 8 بج کر 54 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 13 منٹ پر
مظفر آباد
47 فیصد سورج کو گرہن لگے گا
أغاز 7 بج کر 51 منٹ پر
عروج 8 بج کر 59 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 15 منٹ پر
سکھر
68% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 37 منٹ پر
عروج 8 بج کر 49 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 12 منٹ پر
بنوں
54% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 46 منٹ پر
عروج 8 بجکر 54 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 12 منٹ پر
بہاولپور
61% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 42 منٹ پر
عروج 8 بج کر 53 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 16 منٹ پر
سبی
70% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 26 دسمبر صبح 7 بج کر 36 منٹ پر
عروج 8 بج کر 46 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 7 منٹ پر
لاڑکانہ
69% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
أغاز 7 بج کر 37 منٹ پر
عروج 8 بج کر 48 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 11 منٹ پر
مالاکنڈ
49% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 50 منٹ پر
عروج 8 بج کر 57 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 13 منٹ پر
دالبندین
71% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 33 منٹ پر
عروج 8 بج کر 45 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 5 منٹ پر
فیصل آباد
54 فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 46 منٹ پر
عروج 8 بج کر 56 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 17 منٹ پر
میرپور آزاد کشمیر
47% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 52 منٹ پر
عروج 8 بج کر 59 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 16 منٹ پر
میرپور خاص
73% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 35 منٹ پر
عروج 8 بج کر 48 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 14 منٹ پر
ڈی جی خان
60 فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 42 منٹ پر
عروج 8 بج کر 52 منٹ پر
اختتام 10 بج گے 14 منٹ پر
نوابشاه
72% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 36 منٹ پر
عروج 8 بج کر 48 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 12 منٹ پر
صدقہ جاریہ ٹیم نے اس تحریر کو کافی محنت اور تحقیق کے بعد بنایا گیا ہے. اس پوسٹ کو زیاده سے زیاده شیئر کریں اگر آپ نے گروپس جوائن کر رکھے ہیں تو اس پوسٹ کو ان تمام گروپس میں شیئر کریں تاکہ زیاده سے زیاده لوگ اس مکمل مستند اور مفید معلومات سے مستفید ہوسکیںسورج گرہن کے متعلق نہایت اہم اور دلچسپ معلومات
26 دسمبر بروز جمعرات کو سورج گرہن ہوگا جو پاکستان بھر میں دیکھا جا سکے گا سورج گرہن پاکستان کے زیاده تر علاقوں میں جزوی طور پر دیکھا جائے گا ملک کے کسی بھی علاقے میں 100فیصد مکمل سورج گرہن کا کوئی امکان نہیں سب سے زیاده سورج گرہن پاکستان کے جنوبی علاقوں سے دیکھا جاسکے گا پاکستان کی ساحلی پٹی پر بعض مقامات پر چاند 82 فیصد سے زیاده سورج کو چھپا لے گا ملک کے دیگر تمام علاقوں میں بھی جزوی سورج گرہن کا نظاره کیا سکے گا سورج گرہن صبح کے وقت لگے گا سورج گرہن کا آغاز صبح 7 بج کر 34 منٹ پر ہوگا 8 بج کر 46 منٹ پر سورج گرہن عروج پر ہوگا جبکہ سورج گرہن کا اختتام 10 بج کر 10 منٹ پر ہوگا سورج گرہن کا دورانیہ 2 گھنٹے اور 37 منٹ ہوگا یہ اوقات صرف کراچی کے حساب سے ہیں
پاکستان کے کس شہر میں کتنے فیصد سورج سیاه دکھائی دے گا ؟ اور اس کا وقت کونسا ہوگا ؟ اس متعلق معلومات تحریر کے آخر میں پڑھ سکتے ہیں۔
چاند ہماری زمین کے گرد چکر لگا رہا ہے ہماری زمین سورج کے گرد۔ ﺳﻮﺭﺝ ﮔﺮﮨﻦ ﺍﺱ ﻭﻗﺖ ﻟﮕﺘﺎ ﮨﮯ ﺟﺐ ﭼﺎﻧﺪ ﺩﻭﺭﺍﻥِ ﮔﺮﺩﺵ ﺯﻣﯿﻦ ﺍﻭﺭ ﺳﻮﺭﺝ ﮐﮯ ﺩﺭﻣﯿﺎﻥ ﺁ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ، ﺟﺲ ﮐﯽ ﻭﺟﮧ ﺳﮯ ﺳﻮﺭﺝ ﮐﺎ ﻣﮑﻤﻞ ﯾﺎ ﮐﭽﮫ ﺣﺼﮧ ﺩﮐﮭﺎﺋﯽ ﺩﯾﻨﺎ ﺑﻨﺪ ﮨﻮ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ۔ ﺍﺱ ﺻﻮﺭﺕ ﻣﯿﮟ ﭼﺎﻧﺪ ﮐﺎ ﺳﺎﯾﮧ ﺯﻣﯿﻦ کے جس جس حصے سے گزرتا ﮨﮯ وہاں وہاں سورج گرہن دکھائی دیتا ہے ﭼﻮﻧﮑﮧ ﺯﻣﯿﻦ ﺳﮯ ﺳﻮﺭﺝ ﮐﺎ ﻓﺎﺻﻠﮧ ﺯﻣﯿﻦ ﮐﮯ ﭼﺎﻧﺪ ﺳﮯ ﻓﺎﺻﻠﮯ ﺳﮯ 400 ﮔﻨﺎ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺳﻮﺭﺝ ﮐﺎ ﻣﺤﯿﻂ ﺑﮭﯽ ﭼﺎﻧﺪ ﮐﮯ ﻣﺤﯿﻂ ﺳﮯ 400 ﮔﻨﺎ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﮨﮯ، ﺍﺱ ﻟﯿﮯ ﮔﺮﮨﻦ ﮐﮯ ﻣﻮﻗﻊ ﭘﺮ ﭼﺎﻧﺪ ﺳﻮﺭﺝ ﮐﻮ ﻣﮑﻤﻞ ﯾﺎ ﮐﺎﻓﯽ ﺣﺪ ﺗﮏ ﺯﻣﯿﻦ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﯽ ﻧﻈﺮﻭﮞ ﺳﮯ ﭼﮭﭙﺎ ﻟﯿﺘﺎ ﮨﮯ۔ اسی لئے یوں لگتا ہے گویا سورج کا مکمل یا کچھ حصہ سیاه ہوچکا ہے
ﻣﮑﻤﻞ ﺳﻮﺭﺝ ﮔﺮﮨﻦ ﺍﺱ ﻭﻗﺖ ﻟﮕﺘﺎ ﮨﮯ ﺟﺐ ﭼﺎﻧﺪ ﮐﺎ ﻓﺎﺻﻠﮧ ﺯﻣﯿﻦ ﺳﮯ ﺍﺗﻨﺎ ﮐﻢ ﮨﻮ ﮐﮧ ﺟﺐ ﻭﮦ ﺳﻮﺭﺝ ﮐﮯ ﺳﺎﻣﻨﮯ ﺁﺋﮯ ﺗﻮ ﺳﻮﺭﺝ ﻣﮑﻤﻞ ﻃﻮﺭ ﭘﺮ ﭼﺎﻧﺪ ﮐﮯ ﭘﯿﭽﮭﮯ ﭼﮭﭗ ﺟﺎﺋﮯ۔ اگلے چند ہزار سال میں سب سے لمبے دورانیئے والا مکمل سورج گرہن ﺟﻮﻻﺋﯽ 2186 ﻋﯿﺴﻮﯼ ﮐﻮ ﻟﮕﮯ ﮔﺎ ﺟس دوران ﺳﺎﺕ ﻣﻨﭧ ﺍﻭﺭ ﺍﻧﺘﯿﺲ ﺳﯿﮑﻨﮉ تک اندھیرا چھا جائے گا
سورج گرہن کے دوران کبھی بھی سورج کو ننگی آنکھ سے نہیں دیکھنا چاہئے اگر آپ یہ مناظر دیکھنے کی خواہش رکھتے ہیں تو آپ سورج گرہن دیکھنے کے لئے بنائے جانے والے مخصوص چشمے کی مدد سے دیکھ سکتے ہیں
سورج ﮔﺮﮨﻦ دین اسلام ﻣﯿﮟ ﺧﺪﺍ ﮐﯽ ﻧﺸﺎﻧﯿﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺳﮯ ﺍﯾﮏ ﺳﻤﺠﮭﺎ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ۔۔
رسول اکرم ﷺ کے زمانے میں جب سب سے پہلا سورج گرہن ہوا اتفاق سے اسی دن آپ ﷺ کے بیٹے ابراہیم کی وفات ہوئی تھی۔ لہذا لوگ کہنے لگے کہ سورج گرہن آپﷺ کے بیٹے کی وفات کی وجہ سے ہوا ہے۔ حضورﷺ نے اس ضعیف الاعتقادی کو ان الفاظ سے رد فرمایا:
سورج اور چاند کسی کے مرنے سے گرہن نہیں ہوتے۔ یہ تو قدرت الٰہی کی دو نشانیاں ہیں جب انہیں گرہن ہوتے دیکھو تو نماز کے لیے اٹھ کھڑے ہو۔
(صحيح بخاری: 1041)
ایک حدیث کے الفاظ یہ ہیں :
صحیح بخاری ہی کی ایک اور حدیث میں مرقوم ہےکہ آپﷺ نے فرمایا:
’’چاند اور سورج کا گرہن آثار قدرت ہیں۔ کسی کے مرنے، جینے (یا کسی اوروجہ)سے نمودار نہیں ہوتے۔ بلکہ اللہ اپنے بندوں کو عبرت دلانے کے لئے ظاہر فرماتا ہے۔ اگر تم ایسے آثار دیکھو تو جلد از جلد دعا، استغفار اور یاد الٰہی کی طرف رجوع کرو۔‘‘
(صحیح بخاری : 1059)
لہذا جب ایسا معاملہ پیش آئے تو اہل ایمان کو چاہئے کہ وہ اس نظارہ سے محظوظ ہونے اور توہمات کا شکار ہونے بجائے دربار خداوندی میں حاضری دیں اور گڑگڑا کر اپنے گناہوں کی معافی طلب کریں۔ کیونکہ سورج اور چاند گرہن اللہ کی نشانیوں میں سے ہیں ان كى ذریعے اللہ تعالیٰ اپنی مخلوق کو ڈراتاہے اور ان کے ذہنوں میں قیامت کا منظر تازہ کرتا ہے کہ اس دن سورج لپیٹ دیا جائے گا اور ستارے توڑ دئیے جائیں گے، سورج اور چاند جمع کردئیے جائیں گے، وہ دونوں بے نور ہو جائیں گے۔ سرورکائنات ﷺ کا شمس و قمر کے گہنائے جانے پر عالم یہ تھا کہ آپ ﷺ گھبرا اٹھتے اور نماز پڑھتے۔
نماز کسوف کا طریقہ
جب سورج گرہن ہو تو چاہئے کہ امام کے پیچھے دو رکعتیں پڑھے جن میں بہت لمبی قرات ہو اور رکوع سجدے بھی خوب دیر تک ہوں، دو رکعتیں پڑھ کر قبلہ رُو بیٹھے رہیں اور سورج صاف ہونے تک اللہ تعالیٰ سے دعا کرتے رہیں۔
سورج گرہن کی نماز کی نیت : نیت کرتا ہوں دو رکعت نماز نفل کسوفِ شمس کی، واسطے اللہ تعالیٰ کے، پیچھے اس امام کے، رُخ میرا قبلہ کی طرف، اَﷲُ اَکْبَر۔
26 دسمبر کو ہونے والے سورج کے دوران پاکستان کے کونسء شہر میں کس وقت اور کتنے فیصد سورج کو گرہن لگے گا معلومات پڑھیں
کراچی 77 فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 34 منٹ پر
عروج 8 بج کر 46 منٹ پر
اختتام دس بج کر دس منٹ پر
اسلام آباد
49 فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 26 دسمبر صبح 7 بج کر 50 منٹ پر
عروج 8 بج کر 58 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 15 منٹ پر
لاہور
52 % فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز صبح 7 بج کر 47 منٹ پر
عروج 8 بج کر 58 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 19 منٹ پر
کوئٹہ
64% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 39 منٹ پر
عروج 8 بج کر 48 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 8 منٹ پر
پشاور
50% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز صبح 7 بج کر 48 منٹ پر
عروج 8 بج کر 56 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 13 منٹ پر
حیدر آباد
74% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 35 منٹ پر
عروج 8 بج کر 47 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 12 منٹ پر
ملتان
59% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز صبح 7 بج کر 42 منٹ پر
عروج 8 بج کر 53 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 15 منٹ پر
گوادر
سب سے زیاده 82% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 34 منٹ پر
عروج 8 بج کر 42 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 3 منٹ پر
ڈی آئی خان
56 فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 44 منٹ پر
عروج 8 بج کر 54 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 13 منٹ پر
مظفر آباد
47 فیصد سورج کو گرہن لگے گا
أغاز 7 بج کر 51 منٹ پر
عروج 8 بج کر 59 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 15 منٹ پر
سکھر
68% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 37 منٹ پر
عروج 8 بج کر 49 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 12 منٹ پر
بنوں
54% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 46 منٹ پر
عروج 8 بجکر 54 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 12 منٹ پر
بہاولپور
61% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 42 منٹ پر
عروج 8 بج کر 53 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 16 منٹ پر
سبی
70% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 26 دسمبر صبح 7 بج کر 36 منٹ پر
عروج 8 بج کر 46 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 7 منٹ پر
لاڑکانہ
69% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
أغاز 7 بج کر 37 منٹ پر
عروج 8 بج کر 48 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 11 منٹ پر
مالاکنڈ
49% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 50 منٹ پر
عروج 8 بج کر 57 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 13 منٹ پر
دالبندین
71% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 33 منٹ پر
عروج 8 بج کر 45 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 5 منٹ پر
فیصل آباد
54 فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 46 منٹ پر
عروج 8 بج کر 56 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 17 منٹ پر
میرپور آزاد کشمیر
47% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 52 منٹ پر
عروج 8 بج کر 59 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 16 منٹ پر
میرپور خاص
73% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 35 منٹ پر
عروج 8 بج کر 48 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 14 منٹ پر
ڈی جی خان
60 فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 42 منٹ پر
عروج 8 بج کر 52 منٹ پر
اختتام 10 بج گے 14 منٹ پر
نوابشاه
72% فیصد سورج کو گرہن لگے گا
آغاز 7 بج کر 36 منٹ پر
عروج 8 بج کر 48 منٹ پر
اختتام 10 بج کر 12 منٹ پر
صدقہ جاریہ ٹیم نے اس تحریر کو کافی محنت اور تحقیق کے بعد بنایا گیا ہے. اس پوسٹ کو زیاده سے زیاده شیئر کریں اگر آپ نے گروپس جوائن کر رکھے ہیں تو اس پوسٹ کو ان تمام گروپس میں شیئر کریں تاکہ زیاده سے زیاده لوگ اس مکمل مستند اور مفید معلومات سے مستفید ہوسکیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے