Breaking News
Home / آپ کے مسائل اور اُن کا شرعی حل / نئے عیسوی سال کی مبارکباد یا نیوائیر نائٹ منانا ناجائز ہے۔۔فتوٰی۔۔۔آپ کے مسائل اور ان کا شرعی حل۔۔۔مولانا یوسف لدھیانوی رح

نئے عیسوی سال کی مبارکباد یا نیوائیر نائٹ منانا ناجائز ہے۔۔فتوٰی۔۔۔آپ کے مسائل اور ان کا شرعی حل۔۔۔مولانا یوسف لدھیانوی رح

مسئلہ(۲۲):
نئے عیسوی سال کی آمد پر جو خوشی منائی جاتی ہے ،
اور اس خوشی کے اظہار کیلئے جو افعال اختیار کئے جاتے ہیں مثلاً:
پٹاخے پھوڑنا، تالیاں بجانا، سیٹیاں بجانا، ناچ گانا کرنا، Happy New Year کہنا ،
یا نئے سال کی مبارکبادی دینے کیلئے موبائل سے ایک دوسرے کو SMS بھیجنا وغیرہ ،یہ سب ناجائز ہیں، اور اس میں شرکت یہود ونصاری کی مشابہت اختیار کرنا ہے، جس پر سخت وعید وارد ہوئی ہے ۔(۱) الحجۃ علی ما قلنا:
(۱) ما فی ’’ السنن أبی داود ‘‘: لقولہ علیہ السلام:’’ من تشبہ بقوم فہو منہم‘‘۔
(ص: ۵۵۹)
ما فی ’’ مشکوٰۃ المصابیح ‘‘: عن ابن عباس قال: قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم : ’’أبغض الناس إلی اللہ ثلثۃ ؛ ملحد في الحرم ، مبتغ في الإسلام سنۃ الجاہلیۃ ، ومطلب دم امرئ مسلم بغیر حق لیہریق دمہ ‘‘ ۔ رواہ البخاري ۔ (ص : ۲۷)
(آپ کے مسائل اور ان کا حل: ۸/۱۲۹)
0Shares

About Mufti Tanvir Ahmed

Check Also

کل صبح 9:30 بجے ڈھرنال جامع مسجد خلفائے راشدین ؓ میں نماز کسوف سورج گرہن کی نماز باجماعت ادا کی جائے۔۔سب کو شرکت کی دعوت دی جاتی ہے۔۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے